تخلیق کے لئے چھ دن کا مطلب؟

’أولی الامر‘ سے مراد
اکتوبر 30, 2018
تخلیق کے لئے چھ دن کا مطلب؟
اکتوبر 30, 2018

تخلیق کے لئے چھ دن کا مطلب؟

سوال :’’إن ربکم الذی خلق السموات والأرض فی ستۃ أیام‘‘ قرآن میں ہے ،اور دوسری جگہ کن فیکون ہے ،اس کی تفسیر کیا ہوگی ،کیا ﷲ تبارک تعالی کے بارے میں جمع کا صیغہ استعمال کرسکتے ہیں ؟ ِ

ھوالمصوب:

ﷲ تعالی نے آسمان وزمین کو چھ دنوں میں بنایا ،دوسری جگہ ﷲ تعالی کی قدرت بیان کرنا مقصود ہے، اگر ﷲ تعالی چاہے تو فوراً بھی وجود میں لا سکتا ہے۔ ﷲ تعالی کے لئے واحد اور جمع دونوں صیغے استعمال کر سکتے ہیں ،جمع تکریم کے لئے ہے ،جیسے کہیں کہ ﷲ تعالی فرماتے ہیں ،تو یہ تعظیم وعظمت کے لئے ہے ۔ تحریر:محمد ظہور ندوی عفا ﷲ عنہ